Mirror

بتاتے ہیں سب یہ ہنر ہر ایک میں نھیں ھوتا
اتنا دکھ تو نشے میں نھیں ھوتا
کھتے ہیں ایسا ہر کوی نھیں ھوتا
اتنا نشہ تو شراب میں نھیں ھوتا
بولتے ہیں ہر کسی کو ایسا سوچنا نھیں آتا
اتنی شراب پینے تو کوی مہ خانے نہیں جاتا
کہتے ہیں اب صبح سویرا ویسا نھیں ھوتا
اتنے مہ خانوں میں اب کوی اپنا نھیں آتا
فقط اتنی سی بات ھے
ھر کسی کا دکھ یکساں نھیں ھوتا

Advertisements

Barzakh

آتے جاتے لوگ پوچھتے ہیں حال میرا
کیا بتایں ھوا ہے حال۔۔ بےحال میرا
کیا کہیں کہ سڑک پہ جنازہ روز
گزرتا ہے لاچار میرا
روز کھڑے ھو کہ دیکھتے ہیں اس
امید پہ کہ شائد آج تو وہ آیا ھوگا
یھیں برپا ھہ تماشہ و ملال میرا
کس کس کو جواب دیں اب
کہ ستاے ہوے ھیں ھم
اب تو افسوس بھی نہیں کرتا کوی پرستار میرا
ڈوب گیا ھوگا سورج کہیں
کہیں گریہن ھوتا ھوگا چاند
کچھ یاد نہیں اب
کہ دکھتا تھا کیسا یار میرا
زمانہ لاتعلق ھوگیا بھت
پریشانی نھیں ھے مگر
آتے جاتے کبھی ھم ٹوک لیتے ھیں خود کو
کہ بتاو کیا ھوا ھے حال تیرا